فروٹ چاٹ میں کون سے پھلوں کا استعمال نا کیا جائے؟

فروٹ چاٹ افطار کے دوران روزوں داروں کی پسندیدہ غذا قرار دی جاتی ہے۔

 فروٹ چاٹ سے آغاز کرنے سے انسان خود کو تروتازہ اور توانا محسوس کرتا ہے اور سارہ دن روزے کے سبب محسوس ہونے والی کمزوری اور تھکاوٹ بھی طاقت میں بدل جاتی ہے۔

فروٹ چاٹ کھانے کے فوائد تو اَن گنت ہیں مگر اس بات کا دھیان رکھنا بھی بے حد ضروری ہے کہ اسے بناتے وقت کوئی غلطی تو نہیں کی جارہی ہے ؟

 کیوں کہ کچھ پھلوں کا ایک ساتھ استعمال صحت کے لیے نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔

غذائی ما ہرین کی جانب سے کچھ پھلوں کو ایک ساتھ کھانے سے منع کیا گیا ہے جو کہ مندرجہ ذیل درج ہیں:

غذائی ماہرین کی جانب سے تربوز کو فروٹ چاٹ میں شامل کرنے سے منع کیا جاتا ہے۔

کیونکہ اس میں وافر مقدار میں پانی شامل ہوتا ہے، تربوز اور پانی کے ایک ساتھ استعمال سے ہیضہ ہونے کا خدشہ بڑھ جاتا ہے۔

عموماً روزے دار جیسے ہی روزہ افطار کرتا ہے وہ سب سے پہلے کھجور کے ساتھ ایک گلاس پانی پیتا ہے، اس کے بعد جب یہ فروٹ چاٹ کھائی جاتی ہے تو اس میں موجود تربوز ہیضہ ہونے کا سبب بن سکتا ہے۔

ماہرین کی جانب سے تجویز کیا جاتا ہے کہ اگر دسترخوان پر لسی یا دودھ سے بنی کوئی اور غذا بھی موجود ہے تو اس دن کیلے کا استعمال فروٹ چاٹ میں نہ کریں۔

 ایسا کرنے سے پیٹ خراب اور طبیعت گھنٹوں بوجھل ہو سکتی ہے۔

کچھ لوگوں کو فروٹ چاٹ میں کھٹائی اچھی لگتی ہے، کوشش کریں فروٹ چاٹ بناتے ہوئے اس بات کا خیال رہے کہ اس میں لیموں شامل نہ کریں۔

فروٹ چاٹ کا ذائقہ بڑھانے کے لیے کریم کا استعمال کیا جا سکتا ہے مگر فروٹ چاٹ میں اس دوران لیموں کا رس شامل نہ کریں۔

فروٹ چاٹ میں لیموں شامل کرنے سے اس کے ساتھ کھائی جانے والی دوسری غذائیں یا دودھ سے بنے مشروبات طبیعت خراب کر سکتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here