پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ آج نہ اسلام محفوظ ہے نہ ہی ختم نبوت محفوظ ہے۔

تفصیلات کے مطابق پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمن نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ پوری قوم انتہائی دکھ سے دوچار ہے ، جس طرح لاہور میں ایک کربلا برپا کیا گیا ہے اس کو ریاستی دہشت گری قرار دیتے ہیں اور اس کی پر زور مذمت کرتے ہیں۔

پی ڈی ایم سربراہ نے کہا کہ جو لوگ ملک کی تزلیل کریں ان کو ریاستی پشت پناہی حاصل ہوتی ہے ،آج عمران خان فرانس کا ہیرو بنا ہوا ہے اسے شرم انی چاہیے۔

 مولانا فضل الرحمن نے یہ بھی کہا کہ مسجدوں میں شہید پڑے ہوئے ہیں ان کے لیے ایمبولینس تک روک دی گئی ہے، معاملہ اب رسالت کے ہاتھ سے نکلتا جا ریا ہے، اب مزید برداشت نہیں کیا جا سکتا۔

پی ڈی ایم سربراہ کا کہنا تھا کہ اگر مغربی دُنیا کو یہ کھیل کھیلنا ہے تو اسکے لئے تیار ہیں، اعلان کرتا ہوں کہ فرانس کے سفیر کا جانا اب لازمی ہو گیا ہے۔

 مولانا فضل الرحمن کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس ملک میں غیر حکمرانی تسلیم نہیں کرتے، اگر پاکستان کے ریاستی ادارے اپنی قوم پر بکتر گاڑی چلاتے ہیں تو اس کو ہم دہشت گرد کہیں گے۔

پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمن کا مزید کہنا تھا کہ مطالبہ کرتے ہیں کہ جو معاہدہ ہوئے ان کو پارلیمنٹ میں لایا جائے اور اس صورت حال کو عقل مندی سے حل کیا جائے جبکہ اقتدار کے تختہ الٹنے تک جنگ جاری رہے گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here