وزیراعظم کا تمام مذاہب کے افراد کی دل آزاری روکنے کیلئے اقدامات پر زور

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے دنیا بھر میں تمام مذاہب کے افراد کی دل آزاری روکنے کیلئے اقدامات کرنے پر زور دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے او آئی سی کے سفیروں سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ او آئی سی عالمی سطح پر آگاہی پھیلانے کیلئےکردار ادا کریں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ دنیا میں اسلاموفوبیا میں اضافہ ہورہا ہے جس کے لئے تمام مسلمان ریاستوں کو مل کر کام کرنا ہوگا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اسلاموفوبیاسےبین المذاہب نفرت کو ہوا ملتی ہے اور پاکستان بین المذاہب ہم آہنگی کیلئے کوششیں کررہا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اسلاموفوبیا کے خاتمے کیلئے اجتماعی کاوشوں کی ضرورت ہے اور اس حوالے سے انہوں نے مغربی ریاستوں کو پیغام دیتے ہوئے کہا ہے کہ نبی کریم ﷺہمارے دلوں میں رہتے ہیں۔

وزیراعظم نے بتایا کہ دنیا بھر میں آزادی اظہار رائے کے نام پر توہین رسالت ﷺ سے دل آزاری ہوتی ہے اور ہم بطور مسلمان نبی کریم ﷺ کے خلاف کوئی بات برداشت نہیں کریں گے۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ پاکستان دنیا میں برداشت کے فروغ کے تعاون کیلئے پرعزم ہے لیکن دہشت گردی اورانتہا پسندی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا ہے کہ اگرکوئی ایک مسلمان حملہ کرے تو الزام تمام مسلمانوں پر آتا ہے اور شدت پسندی کو اسلام سے جوڑنے سے مسلمان متاثر ہوتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here